اشاعتیں

گزرنے کی کیا بنیاد ہوگی؟

سنٹرل بورڈ آف سیکنڈری ایجوکیشن (سی بی ایس آئی) کے 10 ویں امتحان کو منسوخ کرنے اور 12 ویں بورڈ کا امتحان ملتوی کرنے کے فیصلے کے بعد والدین اور طلبائ کا ملے جلے رد عمل ہے۔ تاہم ، سب نے صحت اور حفاظت کو ترجیح دی ہے۔ جہاں کلاس 12 کے طلبائ امتحان میں تاخیر کو بہتر سمجھ رہے ہیں ، وہیں کلاس 10 کے طلبا پریشان ہیں کہ انہیں کس بنیاد پر پاس کیا جائے گا؟ جب کوئی امتحان نہیں ہوگا ، تو تشخیص کی بنیاد کیا ہوگی۔ سی بی ایس سی نے اس سلسلے میں کچھ واضح نہیں کیا ہے۔ اسکول بھی سی بی ایس سی کی ہدایتوں کا انتظار کر رہے ہیں کہ دسویں جماعت کے طالب علموں کو پاس کرنے کی کیا بنیاد ہوگی۔ اس بار تقریباth 21.5 لاکھ طلبائ دسویں اور 12 ویں میں تقریبا 14 لاکھ طلبائ نے داخلہ لیا ہے۔ سی بی اےایک سیسی اہلکار کا کہنا ہے کہ اس سمت میں ورزش کے بعد چیزیں شیئر کی جائیں گی۔ ایک نجی اسکول کے پرنسپل کا کہنا ہے کہ دسویں بورڈ کے طلبائ کو پاس کرنے کی بنیاد بہت ساری ہوسکتی ہے۔ پری بورڈ ، داخلی تشخیص ، عملی۔ بس بورڈ فیصلہ کرتا ہے کہ اس کے لئے کتنا وزن دیا جائے۔ اسی کی بنیاد پر نتائج اخذ کیے جاسکتے ہیں۔ سینٹ تھامس کی طالبہ ریتیکا

ڈھابہ کھولتے ہوئے باپ نے کہا بیٹی کھوئی ہے ، ہمت نہیں

کشمیر میں سرگرم جہادیوں کے ایجنڈے کی شکست کی نشاندہی کرتے ہوئے ، کرشنا نے ایک بار پھر بیساکھی کھانوں والی بیساکھی اور ناروتری (کشمیری پنڈتوں کا نیا سال) کے موقع پر لوگوں کو راضی کرنا شروع کیا ہے۔ سیاحوں کو کھانا پیش کرنے میں مصروف ، رمیش کمار کے چہرے پر بیٹے کا غم ہے ، لیکن روح رواں ہیں۔ اس کی مضبوط ارادیت اور عزم کی لکیریں بتا رہی ہیں کہ وہ ہار ماننے والوں میں نہیں ہے ، لیکن ان لوگوں میں جو غم جیتنے کے لئے جنگ جیت جاتے ہیں۔ 17 فروری 2021 کو ، کرشنا ڈھابا اس وقت روشنی میں آیا جب تین مقامی دہشت گردوں نے ڈھابے میں گھس کر فائرنگ کی۔ اس واقعے میں ڈھابا کے مالک رمیش کمار کا بیٹا آکاش مہرہ شدید زخمی ہوگیا تھا۔ اسے فوری طور پر اسپتال لے جایا گیا ، جہاں چند روز زندگی اور موت کے مابین لڑائی کے بعد آکاش نے 28 فروری کو آخری سانس لیا۔ رمیش ایک ڈوگرہ ہندو ہے ، جو اصل میں جموں کا ہے ، جو برسوں سے کشمیر میں مقیم ہے۔ کچھ دن بعد ، پولیس نے تینوں دہشتگردوں کو گرفتار کرلیا ، لیکن ڈھابا بند ہی رہا۔ ایسا لگتا تھا کہ اب یہ کھل نہیں سکے گا اور جہادی اپنے مقصد میں کامیاب ہوجائیں گے۔ لیکن منگل کے روز کرشنا واش

ویکسین لینے کے بعد بھی کوروناسے متاثر ہو رہے ہیں

کچھ لوگ ویکسین لینے کے بعد بھی کورونا کو متاثر ہو رہے ہیں۔ آپ کے ذہن میں سوالات پیدا ہو سکتے ہیں کہ ایسی صورتحال میں ویکسین لینے سے کیا فائدہ ہے؟ ماہرین کا خیال ہے کہ اس کی بہت سی وجوہات ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ ویکسین سے بچاو¿ صرف ویکسین ہے۔ یہ انفیکشن سے بچاتا ہے اور جب انفیکشن ہوتا ہے تو بیماری کو شدید نہیں ہونے دیتا ہے۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ ویکسین کے بعد انفیکشن کی بہت سی وجوہات ہوسکتی ہیں۔ پہلی وجہ یہ ہوسکتی ہے کہ فی الحال وائرس میں اتپریورتنک بہت زیادہ ہورہا ہے۔ ایسی صورتحال میں ، جو ویکسین دی جارہی ہے وہ موجودہ مختلف حالتوں کے خلاف موثر نہیں ہوسکتی ہے۔ دوسری وجہ یہ ہوسکتی ہے کہ مناسب اینٹی باڈیز تیار نہیں کی جارہی ہیں۔ اگر یہ مائپنڈوں کی وجہ سے ہو رہا ہے تو اس کی بہت سی وجوہات ہوسکتی ہیں۔ کوویڈ ماہر ڈاکٹر انشومن کمار نے بتایا کہ فی الحال جو بھی وائرس کی ویکسین ہے وہ انٹرماسکلر انجیکشن ہے ، جو پٹھوں میں دی جاتی ہے۔ یہ خون میں جاتا ہے اور وائرس کے خلاف اینٹی باڈیز بناتا ہے۔ یہ ویکسین کے جسم میں بنیادی طور پر دو قسم کے اینٹی باڈیز تیار کرتا ہے۔ پہلا ö امیونوگلوبلین ایم ، طبی لحاظ سے

جج گھر سے ہی کریں گے مقدمات کی سماعت !

سپریم کورٹ کے 44 ملازمین کو کورونا پازیٹو ہونے کے سبب سبھی جج صاحبان اب اپنے گھروں سے ہی عدالتیں لگائیں گے ۔اور سپریم کورٹ کی بنچ اپنے مقررہ وقت سے ایک گھنٹہ کی دیر ی سے سماعت کے لئے بیٹھے گی ۔سپریم کورٹ کے پچاس فیصد ملازمین کے پازیٹو ہونے کو لیکر میڈیا میں آئی خبروں کو لیکر بڑی عدالت کے افسرنے بتایا پچھلے ایک ہفتہ میں 44 ملازم پازیٹو ملے اس وقت کورٹ میں تین ہزار ملازم کام کررہے ہیں ۔اب اپنے اپنے گھروں سے کام کرنے کے لئے بڑی عدالت نے دو اطلاعات جاری کی ہیں جن میں کہاگیا ہے سماعت کے لئے بنچ دس سے گیارہ کے درمیان بیٹھتی ہے اب دیر سے بیٹھے گی اب اپنے گھروں سے ہی ویڈیو کانفرنسنگ کے ذریعے معاملے سنیں گے دوسری اطلاع میں زیادہ اہم ترین معاملوں پر عدالت نے اگلے حکم تک روک لگا دی ہے ۔ادھر دہلی ہائی کورٹ کے بھی تین جج کورونا سے متاثر پائے گئے ہیں اور ہو خود گھر میں ہی آئیسولیٹ ہو گئے ہیں ۔ (انل نریندر)

ایران کے نوکلیائی تنصیب پر حملہ!

ایران نے اپنی زیرزمین نیوکلیائی تنصیبات پر حملہ کرنے کے لئے اسرائیل کو ذمہ دار ٹھہرایا ہے اس حملے میں نیوکلیائی مرکز کا سنٹری فیوز تباہ ہو گیا تھا جس کا استعمال یورینیم افزودگی کے لئے کیا جاتا ہے ۔ایران نے دھمکی دی ہے کہ وہ اس حملے کا بدلا ضرور لے گا ۔وزارت خارجہ کے ترجمان سعید خطیب زادہ کا یہ بیان اتوار کے واقعہ کے لئے پہلی بار سرکار طور پر اسرائیل پر الزام لگایا گیا ہے اس واردات سے نیوکلیائی سینٹر میں بجلی گل ہو گئی تھی اسرائیل نے حملے کو سیدھے طور پرذمہ داری نہیں لی ہے بہر حال شبہہ ایران پر چلا گیا کیوں کہ میڈیا نے دیش کے ذریعے تباہ کن سائبر حملے کی خبر دی اس کے بعد بجلی چلی گئی اس حملے سے دونون ملکوں میں کشیدگی اور بڑھ جائے گی ۔امریکہ کے وزیر دفاع لائڈ اشٹن سے بات چیت کرنے والے وزیراعظم بنیامن نیتن یاہو نے عہد کیا ہے کہ ایران اور دنیا کی طاقتوں کے درمیان نیوکلیائی سمجھوتہ کو بحال ہونے کی کوشش کو روکنے کے لئے ان کے بس میں جو ہے وہ کریں گے وہیں خطیب زادہ نے کہا نیتن یاہو سے جواب لینا حالانکہ انہوں نے اس بارے میں تفصیل نہیں بتائی خطیب زادہ نے مانا کہ آئی آر ایس 1 سینٹی فیوز حملے میں ت

الزام جانچ والے ملزم کو بری کرنے کی بنیاد نہیں!

دہلی ہائی کورٹ نے کہا ہے کہ الزام کی جانچ کے ملزم کو بری کرنے کی بنیاد نہیں ہو سکتی ہے ۔اگر ایسا ہوتا ہے تو لوگوں کو عدلیہ پر سے بھروسہ اٹھ جائے گا یہ کہتے ہوئے خودکشی کے لئے اکسانے کے معاملے میں ساس نند کو بری کرنے کے حکم کو منسوخ کر دیا ۔اور نئے سرے سے جانچ کرانے کا حکم دیا اس نے مانا کہ اس معاملے میں جانچ افسر کا رول مشتبہ رہا ہے اور نچلی عدالت نے بھی حقائق صحیح طریقہ سے نہیں پڑھا ۔جسٹس سبرا منیم پرساد نے پولیس سے متوفی کی ماں سروج بھولا کی ایس ڈی ایم کے سامنے دو جولائی 2015کو دئیے گئے بیانات کی بنیاد پر جانچ کرنے کی ہدایت کی ساتھ ہی کسی دیگر جانچ افسر سے جانچ کرانے کو کہا ہے ۔جو انسپکٹر سطح کے نیچے کا نہ ہو انہوں نے اس حقیقت کی جانچ کرنے کو کہا ہے کہ کیا یہ معاملہ خودکشی کے لئے اکسانے کی نیت اور محض قتل کا معاملہ بنتا ہے یا نہیں جسٹس نے کہا کہ جانچ ایجنسی کی لاپرواہی یا چوک ملزم کے حق میں زیادتی ہے توعدالت کی ذمہ داری بنتی ہے کہ وہ صحیح جانچ کرانے ۔عدالت کو اس حقیقت کے تئیں اپنی آنکھیں بند نہیں کرنی چاہیے کہ وہی متاثرہ ہے۔ جو عدالت کا دروازہ کھٹکھٹاتے ہیں اور انصاف چاہتے ہیں انہوں

کمبھ میں 45 لاکھ شردھالوو ¿ں نے ڈبلی لگائی !

ہریدوار میں کمبھ میں سوموتی اماوسیا کے شاہی اسنان میں ہر کی پوڑی سمیت رشی کیش منی کے گھاٹوں پر شردھالو¿ں کی بڑی بھیڑ تھی کمبھ میلہ انتظامیہ کے مطابق 33 لاکھ لوگون نے کمبھ میلہ زون میں دوسرے شاہی اسنان میں گڑھ میں ڈبلی لگائی ۔حلانکہ کمبھ میلہ کو لیکرمرکز اور ریاستی سرکار اور کمبھ میلہ انتظامیہ کے ذریعے کورونا کو لیکر جاری گائڈ لائنس کی شردھالو¿ں اور تیرہ اکھاڑوں کے سادھو سنتوں نے کھلے عام دھجیاںاڑائی اور شوبھا یاترا نکال رہے سادھو سنتوں نے کورونا بچاو¿ کے لئے سماجی دوری کا بالکل خیال نہیں رکھا ۔گنگامیں ڈبلی لگا رہے سادھو سنت مہا منڈلیشور ، اچاریہ مہا منڈلیشور سماجی دوری و ماسک لگانے کی ضروری اپیل لوگوں سے کررہے تھے ۔آل انڈیا اکھاڑا پریسد کے قومی صدر مہنت نریندر گری اور چھ سادھو بھی کورونا متاثر ہوئے تھے ۔اس برس پورے سال میں صرف ایک ہی صوم وتی اماوسیہ ہونے کے سبب پیر کو اسنان کو لیکر شردھالو¿ں میں بھاری رغبت دکھائی دی یہ اسنان کمبھ دور کا پہلا شاہی اسنان تھا ۔ (انل نریندر)